سہ ماہی صدائے لائبریرین جلد5، شمارہ4

بہت دنوں سے لکھنے کی کوشش کررہا ہوں لیکن طبیعت لکھنے پر مائل نہیں ہوپارہی۔ لکھنے کے لئے جس ارتکازِتوجہ (Concentration)کی ضرورت ہوتی ہے وہ میسر نہیں ہوپارہی۔اب اس کا قصوروار نت نئی ٹیکنالوجی کو قرار دیا جائے یا خود کو، سرِ دست تو ایک واقعہ یاد آرہا ہے۔

بہت برس بِیت گئے۔ سکول کا زمانہ تھا اور سر میں شاعری کا جنون۔ ان دنوں میں ایک نظم لکھی تھی۔ نظم کا عنوان  ”عشق“ تھا۔  نظم تو تو یاد نہیں رہی لیکن اس کا مضمون یاد آرہا ہے جوکچھ یوں تھا:

”اللہ تعالیٰ نے انسان کو جن گوناگوں نعمتوں سے نوازا ہے ان میں سے قوت متخیلہ (Thinking Power)سب سے عظیم نعمت ہے۔ انسان کی قوت متخیلہ جب کسی ایک نقطہ پر مرکوز ہوتی ہے تو وہ نقطہ ایک مقصد بن جاتا ہے۔اکثر اوقات اس مقصد اور انسان کے درمیان ایک عجیب سے جذباتی وابستگی پیدا ہوجاتی ہے۔اگر یہ جذباتی وابستگی شدت اختیارکرجائے تو جنوں کی ایک کیفیت پیدا ہوجاتی ہے۔ اسی کیفیت کو ”عشق“ کہتے ہیں۔“

آج  سکول کے اس  ننھے طالبعلم  پر ہنسی آرہی ہے جس نے اتنی چھوٹی سی عمر میں ایسی بات کہہ ڈالی تھی اور علامہ اقبال ؒ کے اس شعر کی تصویر بناحیرت میں بھی ہوں کہ:

بجھی عشق کی آگ اندھیر ہے

مسلماں نہیں راکھ کا ڈھیر ہے

خیر، صدائے لائبریرین کی پانچویں جلد کا آخری یعنی چوتھا شمارہ آپ کے سامنے ہے۔الحمد للہ۔میگزین پڑھئے اور ہمیں اپنی قیمتی رائے سے ہمیں آگاہ کیجئے۔

انشاء اللہ بہت جلد اگلے شمارے کے ساتھ آپ کے سامنے حاضر ہوں گے۔ اللہ آپ کا حامی و ناصر ہو۔آمین

میگزین پڑھنے یا ڈاؤن لوڈ کرنے کے لئےتصویر پر کلک کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published.