imagesانیسویں صدی یعنی 1825 میں لنکنشائرمیں دریائے وتھم کے کنارے پائی جانے والی یہ تلوار بادشاہ جون کے عہد کی ہے اوراس کا وزن ایک کلو سے زائد جب کہ لمبائی 38 انچ ہے تاہم تلوار پر ایک ایسی تحریر لکھی ہوئی ہے جسے پڑھنے سے عجائب گھر انتطامیہ قاصر ہے اور اب اس نے عوام سے اس تحریر کو سمجھنے میں تعاون طلب کیا ہے۔

تلوار کی دھار پر NDXOXCHWDRGHDXORVI تحریر ہے جس کا مطلب جاننے کی سر توڑ کوشش کی جارہی ہے۔ ایک ماہر کے مطابق تحریر کے درمیان CHWDRGHD لکھا ہے  جو جرمن زبان میں تلوار کے لیے استعمال ہوتا ہے لیکن اسپیلنگ میں چند غلطیاں ہیں جب کہ بعض ماہرین کا خیال ہے کہ اسے بنانے والا ان پڑھ تھا اور اس تحریر کا کوئی مطلب نہیں لیکن ایک ماہر نے ان الفاظ کے مطلب جنگ کیلیے تیار رہنا بتائے ہیں۔

برٹش لائبریری کے مطابق لوگ اس تحریر کی دلچسپ اور حیرت انگیز مطلب بیان کررہے ہیں لیکن ان میں سے ایک بھی شخص نے اس کا ٹھوس ثبوت پیش نہیں کیا ہے اس تلوار کو خصوصی نمائش کے لیے پیش کیا گیا ہے جو یکم ستمبر تک جاری رہے گی۔