پاکستان اور ترکی صدیوں سے تاریخی ، ثقافتی اور اسلامی اخوت کے رشتے میں بندھے ہوئے ہیں۔ سفیرِ ترکی صادق بابر گرجن
نیشنل بک فاؤ نڈیشن کے چھٹے قومی کتاب میلے کی پُر وقار افتتاحی تقریب: عطا ء الحق قاسمی، راجہ حسن عباس اور ڈاکٹر انعام الحق جاوید کا خطاب

22-4-2015 (2)اسلام آباد (22۔اپریل 2015ء) آج کا پاکستان ایک علم دوست، امن پسند، صلح جو اور روشن ملک کے طور پر اُبھر کر دُنیا کے سامنے آیا ہے۔ دُنیا نے تسلیم کر لیا ہے کہ پاکستان نے امنِ عالم کی بحالی کے لیے نا قابلِ فراموش قربانیاں دی ہیں۔ پاکستان کی انہی قربانیوں کے نتیجے میںآج پاکستان کے امیج اور دنیا میں پاکستان کی شناخت میں واضح تبدیلی آئی ہے۔ ان خیالات کا اظہار وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات و قومی ورثہ سینیٹر پرویز رشید نے نیشنل بک فاؤ نڈیشن کے زیر اہتمام پانچ روزہ چھٹے قومی کتاب میلہ 2015ء میں شرکائے تقریب سے چیف گیسٹ کی حیثیت سے کیا ۔ اس تقریب کے لیے ملک بھر سے اور بیرون ملک سے این بی ایف کے2015کے بُک ایمبیسیڈر ز، رائٹرز ، دانشور ،سینئر شخصیات اور طلبہ و طالبات ہال میں موجود تھے۔وفاقی وزیرنے کہا کہ نیشنل بک فاؤنڈیشن کی کارکردگی بہترین ہے اور دوسرے اداروں کے لیے یہ ایک مثال ہے ۔انھوں نے این بی ایف کے منیجنگ ڈائریکٹر ڈاکٹر انعام الحق جاوید اور اُن کی ٹیم کو مبارکباددی۔ چیف گیسٹ نے تقریب میں موجود تمام شرکاء سے کتاب کا حلف نامہ لیا اور نامور اہلِ قلم،مصنفین، شعراء بک ایمبیسیڈر زاور دانشوروں کی اس پر وقار تقریب میں شرکت پر اپنی جانب سے اور نیشنل بک فاؤنڈیشن کی طرف سے شکریہ ادا کیا۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ پاکستان کا سافٹ امیج کتاب دوستی کے فروغ کی کاوشوں کے بغیر ادھورا ہے۔ اس سلسلے میں نیشنل بک فاؤنڈیشن نے پچھلے سال کی طرح اس برس بھی قومی کتاب میلے کی روایت کو نہ صرف قائم رکھا ہے بلکہ اسے مزید مستحکم انداز میں آگے بڑھایا ہے ۔ اس سے یقیناًنئی نسل استفادہ کرے گی۔ تقریب کے آغاز میں قاری نجم مصطفےٰ نے تلاوت کلامِ پاک کی سعادت حاصل کی۔نظامت کے فرائض فرح سعدیہ نے انجام دئیے۔
این بی ایف کے اس بک میلے میں برادر اسلامی ملک ترکی کو گیسٹ آف آنر کنٹری قرار دیا گیا ہے ۔ اس موقع پر پاکستان میں ترکی کے سفیر عزت مآب صادق بابرگرجنبھی سٹیج پر موجود تھے۔ انھوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان اور ترکی صدیوں سے تاریخی، ثقافتی اور اسلامی اخوت و یگانت کے لا زوال رشتے میں بندھے ہوئے ہیں۔ انھوں نے فروغ کتب بینی کے لیے نیشنل بک فاؤنڈیشن کی کاوشوں کی تعریف کی۔ معزز سفیر نے اپنی گفتگو میں پاکستان سے ترکی کے قدیمی رشتوں کو علمی اور تحقیقی انداز میں پیش کیا اور ترکی کے نامور شعراء اور دانشوروں کا تذکرہ بھی کیا۔ انھوں نے کہا کہ میں دل سے چاہتا ہوں کہ نیشنل بک فاؤنڈیشن اسی طرح ترقی اور کامیابی کی منازل طے کرتا رہے۔معزز سفیرنے اپنی تقریر کا اختتام ’’پاک ترک دوستی۔ زندہ باد‘‘ کے پر جو ش نعرے پر کیا جس کا حاضرین نے بھر پور تالیوں سے جواب دیا ۔ اسٹیج پر سیکرٹری کیبنٹ ڈویژن راجہ حسن عباس، نامور فگشن نگار انتظار حسین ، کالم نگار عطاء الحق قاسمی اور سیکرٹری اطلاعات محمد اعظم بھی موجود تھے۔ سیکرٹری کیبنٹ ڈویژن راجہ حسن عباس نے کہا کہ نیشنل بک فاؤ نڈیشن کتب بنی کو فروغ دے کر ایک مقدس مشن کو خوش اسلوبی سے نبھا رہا ہے۔ کتاب کا قومی دن منانا وقت کی اہم ضرورت ہے اور این بی ایف کاآج کا تھیمBook & Peace go togetherبہت اہمیت کا حامل ہے۔ سیکرٹری کیبنٹ ڈویژن نے این بی ایف کے سربراہ اور ان کی ٹیم کے ارکان کو اس کامیاب بک فیئر پر مبارکباد دی ۔

22-4-2015اس موقع پر عطا ء الحق قاسمی نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نیشنل بک فاؤنڈیشن ،ایم ڈی ڈاکٹر انعام الحق جاوید کی سربراہی میں قابل تحسین کارکردگی دکھانے میں کامیاب ہے۔ انھوں نے تجویز دی کہ رائٹر زکا ایک اپنا تخلیقی مقام ہے لیکن زیادہ تعداد میں اچھی کتابیں پڑھنے والے قارئین کو بھی اعزاز سے نوازاجانا چاہیے۔قبل ازیں چیف گیسٹ وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات و قومی ورثہ سینیٹر پرویز رشید کی پاک چائنا فرینڈ شپ سنٹر آمد پر این بی ایف کے منیجنگ ڈائریکٹرنے اُن کا پرتپاک استقبال کیا۔ GSISکے بچوں نے خوبصورت بینڈ پیش کیا۔
ایم ڈی ڈاکٹر انعام الحق جاوید نے استقبالیہ کلمات پیش کرتے ہوئے وفاقی وزیر سینیٹر پرویز رشید ، سفیرِ ترکی عزت مآب صادق بابر گرجن، سیکرٹری کیبنٹ ڈویژن راجہ حسن عباس، سیکرٹری انفارمیشن محمد اعظم، انتظار حسین اور عطاء الحق قاسمی سمیت ہال میں تشریف فرما معزز مندو بین، بک ایمبیسیڈرز ، معروف رائٹرز اور دیگر شخصیات کی آمد پر اُن کا شکریہ ادا کیا ۔ایم ڈی نے اپریل 2014ء سے اپریل2015ء تک کے این بی ایف کے کامیابیوں سے بھر پور اور پر عزم سفر کا اجمالی جائزہ پیش کیا۔ انھوں نے کہاکہ حکومت پاکستان نے اس پورے عرصے میں ہماری سر پرستی اور رہنمائی کی اور ہر ممکن تعاون فراہم کیا۔انھوں نے وفاقی وزیر سینیٹرپرویز رشید کا اپنی جانب سے اور نیشنل بک فاؤ نڈیشن کی طرف سے ہر اہم موقع پر رہنمائی کرنے پر شکریہ ادا کیا۔ ایم ڈی نے کہا کہ اس عرصے میں جناب عطاء الحق قاسمی بھی ہماری بھر پور رہنمائی کرتے رہے۔انھوں نے ایک سالہ کارکردگی کے حوالے سے کتب کے معیار ، سیل کے سائنٹفک میکنزم کے نتیجے میں 30کروڑ روپے سے زائد کی ریکارڈسیل ، کراچی میں عالمی معیار کے کتاب گھر کے قیام، لاہور آفس کی ایوان اقبال میں منتقلی ، ایک ہزار کتب کے سلوگن کے تحت 150سے زیادہ کتب کی اشاعت ، نصابی کتب کی عالمی معیار کے مطابق اشاعت اور بر وقت فراہمی، بریل بکس ، بکس آن وہیلز کے تحت ملک کے دور دراز علاقوں کے مکینوں تک کتاب کی فراہمی ، انٹر یونیورسٹی کنسور شیم اور دیگر اداروں کے ساتھ ایم او یوز ، ریڈرز بک کلب ، این بی ایف ویب سائٹ کے ذریعے ہزاروں افراد کو کتب بینی کے مواقع فراہم کرنے سمیت بہت سارے پہلو ؤ ں کا ذکر کیااور بتایا کہ پہلی بار اسلام آباد میں ہونے والے نیشنل بک فیئر کے ساتھ بیک وقت صوبوں میں این بی ایف کے دفاتر میں بھی بُک فیئرز کا انعقاد کیا گیا ہے ۔
نیشنل بُک فاؤنڈیشن کا پانچ روزہ گرینڈ بُک فیئر 26اپریل (اتوار) تک جاری رہے گا جس میں عوام اور بُک لورز کی دلچسپی کے ڈھیروں پروگرام شامل ہیں۔