Prof. anwar jamalاسلام آباد (پ ر) انسانیت کی خدمت کرنا اور اپنی صلاحیتوں کو مستحق لوگوں کے لیے وقف کرنا حج کر لینے سے بڑی عبادت ہے۔ ڈاکٹر آصف محمود جاہ نے شمالی وزیرستان کے آئی ڈی پیز کے لیے جس بے لوث جذبے سے خدمت کی وہ ایک روشن اور قابل تقلید مثال ہے۔ ان کی کتاب ’’حرا ،ہجرت اورخدمت‘‘ اس حوالے سے ایک اہم کتاب ہے اور آنے والی نسلوں کے لیے خدمت کا پیغام دیتی ہے۔ ان خیالات کا اظہار نامور قانون دان اور سابق چیئرمین سینٹ وسیم سجاد نے آئینہ کے زیر اہتمام کتا ب کی تقریب رونمائی کے شرکاء سے صدارتی کلمات ادا کرتے ہوئے کیا۔مہمان خصوصی اور نیشنل بُک فاؤنڈیشن کے ایم ڈی ڈاکٹر انعام الحق جاوید نے کہا کہ ڈاکٹر جاہ کی پُر اثر تحریروں میں درد مند دل دھڑکتا ہے۔ این بی ایف نے ان کی کتاب ’’دوا،غذااور شفا‘‘ شائع کی جس کی اس قدر پذیرائی ہوئی کہ چند ماہ میں اس کے تین ایڈیشن ہاتھوں ہاتھ بِک گئے کیوں کہ اس کتاب میں عام لوگوں کے لیے مفید طبی مشورے دیئے گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر جا ہ کی کتاب ’’حرا ،ہجرت اورخدمت‘‘ بھی خدمت کے جذبے کی عکاس ہے جس میں ڈاکٹر آصف جاہ کے فلاحی ادارے کی بے مثال کاکردگی اور خدمات کا ذکر ہے۔یہ کتاب ہر صاحبِ درد کو دعوتِ فکر دیتی ہے۔ تقریب کی نظامت آئینہ کے ملک فداالرحمان نے کی۔ صاحب شام ڈاکٹرآصف جاہ نے تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کیااور کہا کہ آئی ڈی پیزاعلیٰ پاکستانی ہیں جنہوں نے پاکستان کی بہادر فوج کی آواز پر لبیک کہا اور ایثار کی وہ مثالیں پیش کیں جن پر تاریخ فخر کرے گی ۔انہوں نے وزیرستان کی بیٹی حرا کی جرات پر خراج تحسین پیش کیا۔ ممبر قومی اسمبلی شاہد ہ اختر نے کہا کہ آئی ڈی پیزکے لیے ڈاکٹر جاہ کی خدمات ایک بڑا کارنامہ ہے۔ڈاکٹر جمال ناصر نے کہا کہ آج کے نفسانفسی کے دور میں ڈاکٹر جاہ جیسے لوگ قابل فخر ہیں۔ان کی کتاب پر مبارکباد پیش کرتے ہیں ۔ سرفراز شاہد نے ڈاکٹر آصف جا ہ کی عملی خدمات کو تحسین کی نگاہ سے دیکھا اور کہا کہ آج معاشرہ ان جیسے لوگوں کی وجہ سے محفوظ اور قائم ہے۔ ڈاکٹرانور نسیم نے اس کاوش کو قابل ستائش قرار دیا ۔ شمالی وزیرستان کی مہاجر بچی حرا نے پشتومیں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں شمالی وزیر ستان کے لوگوں کی طرف سے تمام پاکستانیوں اور ڈاکٹر آصف محمود جاہ کا شکریہ ادا کرتی ہوں جنہوں نے مشکل وقت میں وزیرستان کے بے سہارا لوگوں کے لیے اپنی خدمات وقف کر دیں۔خطاب کرنے والوں میں کنور محمد دلشاد ، میاں محمد نذیر اظہر، ڈاکٹر مقصود جعفری اور دیگر شامل تھے۔