آن لائن نیوز:امریکی ادارے ناسا نے اپنی مریخ پر کی گئی ریسرچ کو عوام کے سامنے رکھنے کا فیصلہ کرلیا اور اس سلسلے میں ایک باقاعدہ انٹرنیٹ لائبریری بنا دی ہے جس میں ایک لاکھ 40 ہزار تصاویر،آڈیوز اورویڈیوریکارڈنگز رکھی گئی ہیں۔ اب ایک عام شخص بھی انٹرنیٹ کے ذریعے مریخ پر پائے جانے والے زندگی کے آثار اور وہاں کی فضا کے نظارے کرسکتا ہے۔ ناسا نے حال ہی میں مریخ پر موجود خلابازوں کے مشن کی طرف سے بھیجی گئی تصاویر کوبھی اس لائبریری کا حصہ بنایا ہے۔ ناسا کے حکام کا کہنا ہے کہ اب مریخ پر ہونیوالے کسی بھی پیشرفت کو فوری طور پر اس انٹرنیٹ لائبریری کا حصہ بنایا جائے گا تا کہ دنیا کے لوگ تازہ ترین حالات سے آگاہ رہ سکیں اور وہاں زندگی کے ممکنہ آثار کے متعلق اپنی معلومات اپ ڈیٹ رکھ سکیں۔ ان کا کہنا ہے کہ حال ہی میں ملنے والی پہاڑوں کی تصاویر اور ایک طوفان کی ویڈیو کو عوام کی بڑی تعداد نے دیکھا اور اس پر تبصرہ کیا ہے ۔یہ پہاڑ اور طوفان بالکل ہماری دنیا جیسے تھے جس پر تحقیقات جاری ہیں ،جس کے نتائج سے بھی جلد آگاہ کیا جائیگا۔