unnamedاسلام آباد ( 16ستمبر2015ء) معاشرے میں مثبت تبدیلی لانے اور نوجوان نسل کو کتاب سے قریب کرنے کے لیے ’’شہرِ کتاب‘‘ طرز کے ہفتہ وار بُک فئیرز ایک تسلسل کے ساتھ منعقد کیے جانے چاہئیں۔ گزشتہ ڈیڑھ سال میں نیشنل بُک فاؤنڈیشن نے بُک پروموشن کے سلسلے میں گرانقدر کام کیا ہے جس کے لیے ادارے کے سربراہ ڈاکٹر انعام الحق جاوید اور اُن کے کارکنان مبارکباد کے مستحق ہیں۔ ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر حکومت سندھ برائے لوکل باڈیز ناصر حسین شاہ نے این بی ایف کے کتاب میلے کے تیسرے اور آخری روز اختتامی تقریب کے شرکاء سے چیف گیسٹ کی حیثیت سے کیا۔ انہوں نے ریڈرز کلب ممبر شپ کو ایک نہایت مفید اور مستحسن سلسلہ قرار دیا۔ تقریب میں ڈسٹرکٹ میونسپل کارپوریشن ایسٹ کے ایڈمنسٹریٹر رحمت شیخ نے بھی شرکت کی اور اپنے تاثرات میں کہا کہ کتاب سے بڑھ کر سچا اور وفادار دوست اور کوئی نہیں۔ کتاب نہ صرف علم اور معلومات میں اضافہ کرتی ہے بلکہ سوچ میں نکھار اور فرد کی شخصیت کی تہذیب میں بھی اہم کردار ادا کرتی ہے۔ اختتامی تقریب میں شہرِ قائد کے ہر طبقہ فکر کے لوگوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔
قبل ازیں مہمانِ خصوصی کی آمد پر این بی ایف کراچی کے انچارج محسن ناریجواور میلے کے چیف کوآرڈی نیٹر سلطان خلیل نے اُنہیں خوش آمدید کہا۔ معزز مہمان نے این بی ایف سمیت دیگربُک سیلرز اورپبلشرز کے بُک سٹالوں کا دورہ کیا اور کتابوں کے معیار اور اُن پر دئیے جانے والے ڈسکاؤنٹ کو سراہا۔ انہوں نے ہر بُک سٹال سے کتب خریدیں اور نے لکی بُک ڈرا کی قرعہ اندازی کی۔ اس موقع پر این بی ایف اور ڈسٹرک میونسپل کارپوریشن ایسٹ کے کارکنان کو کامیاب میلے کے انعقاد اور کارکردگی پر شیلڈز بھی دی گئیں۔’’شہرِکتاب میلہ‘‘ امن و اخوت ، قومی یگانگت اور کتاب دوستی کے پیغام کے ساتھ اختتام پذیر ہوا۔