pic for press releasاین بی ایف بُک فئیر میں قرعہ اندازی کوپن پر سب سے زیادہ رش
این بی ایف کے پاک چائنا سنٹر میں میلے میں آنے والوں کا سب سے زیادہ رش ’’لکی بُک ڈرا‘‘ کے سٹال پر دیکھنے میں آیا۔ لکی ڈرا میں ہر دو گھنٹے بعد قرعہ اندازی میں جن خوش نصیبوں کے نام نکلتے ہیں، اُنہیں اُن کی پسند کی دو ہزار روپے مالیت تک کی کتب مفت حاصل کرنے کا اختیار ہے۔ لکی بُک ڈرا کا کوپن بغیر چارجز بھرا جا سکتا ہے۔

انتظار حسین کے ساتھ شامِ اعتراف کو پسند کیا گیا
پاک چائنا فرینڈ شپ سنٹر کے مین آڈیٹوریم میں لیجنڈ اہل قلم، ناول نگار اور عالمی شہرت یافتہ رائٹر انتظار حسین کے ساتھ منائی گئی شامِ اعتراف کو شرکاء نے پسند کیا۔ اس میں خصوصی شرکت نامور کالم نگار و شاعر عطاء الحق قاسمی نے کی جب کہ کمپئرز میں سنیئر افسانہ نگار مسعود اشعر اور امریکہ سے آئی ہوئی این بی ایف بُک ایمبیسیڈر ڈاکٹر سائرہ علوی شامل تھیں۔ اس یاد گار نشست میں انتظار حسین نے اپنے قلمی سفر کے مختلف گوشوں پر سوالوں کے جواب دیے اور اپنی کتاب سے مختلف اور دلچسپ اقتباسات بھی سُنائے۔

این بی ایف بُک میلے میں رکھے گئے مجسمے شائقین اور بچوں کی توجہ کا مرکز بنے رہے
لوگوں نےقائداؑ ظمؒ ، علامہ اقبال، منٹو، احمد ندیم قاسمی ، غالب اور دیگر کے ساتھ تصاویر بنوائیں
اسلام آباد (24اپریل2015ء ) پاک چائنا فرینڈ شپ سنٹر میں این بی ایف نے قائداؑ ظم ؒ ، علامہ اقبال،سعادت حسن منٹو، احمد ندیم قاسمی ، مرزاغالب،حفیظ جالند ھری اور فیض احمد فیض، کے گولڈن کلر کے وہ مجسمے بھی رکھے ہیں جو این بی ایف میوزیم کا حصہ ہیں۔ میلے میں آنے والے فیمیلیز ، بچوں اور دیگر شائقین نے قائد، اقبال، منٹو اور دیگر کے مجسموں کے ساتھ تصاویر بنوائیں اور محظوظ ہوئے۔ خاص طور پر بچوں نے فطری انداز میں من پسند تصویریں بنوائیں۔

’’کتاب زندہ باد۔ نیشنل بُک فاؤنڈیشن زندہ باد ‘‘:بُک میلے میں انکل سرگم شو کانعرہ
پپٹ کی دُنیا کے مشہورِ زمانہ آرٹسٹ اور پتلیوں کے مختلف کرداروں کے خالق مصنف فاروق قیصر (انکل سرگم) کا شو نیشنل بُک فاؤنڈیشن کے مین ہال میں ہوا۔ انکل سرگم کے طنزیہ ، تیکھے ، شوخ ، شگفتہ اور معنی خیز جملوں سے حاضر ین بہت محظوظ ہوئے۔ بُک میلے کی مناسبت سے انکل سرگم کے تمام کرداروں کی گفتگو کا محور کتاب تھی، پتلیوں نے شگفتہ انداز میں این بی ایف کی کتب بینی کے فروغ کی طویل خدمات کو خراجِ تحسین پیش کیا اور اختتام ’’ کتاب زندہ باد ‘‘’’ نیشنل بُک فاؤنڈیشن زندہ باد‘‘ کے نعرے پر کیا۔