عامر بٹ

لائل پور میں جارج پنجم کی تاج پوشی کے موقع پر 1911 میں قائم ہونے والی کارونیشن لائبریری (موجودہ علامہ اقبال لائبریری) فیصل آباد کی پہلی لائبریری ہونے کے ساتھ ساتھ شہر کا ایک اہم ثقافتی ورثہ ہے۔ اپنی تعمیر کے وقت اس کا کل رقبہ 14 کنال 3 مرلہ تھا۔

کارونیشن لائبریری ابتدا میں عوام کے چندے، شہری میونسپلٹی اور اس وقت کے ڈسٹرکٹ بورڈ ( جو اب ڈسٹرکٹ کونسل سے ضلع کونسل اور موجودہ سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کی صورت میں موجود ہے) کی طرف سے باہمی طور پر عطیات جمع کر کے ڈپٹی کمشنر کے زیر نگرانی چلتی رہی۔

1945 میں لائبریری میں چھ ہزار کے قریب کتابیں تھیں جن میں زیادہ تر ہندی اور انگلش میں تھیں جبکہ ادرو میں کتابوں کی تعداد کم تھی۔ 1968  میں اس کا انتظامی کنٹرول ڈسٹرکٹ بورڈ/ ڈسٹرکٹ کونسل کے سپرد کر دیا گیا، اس وقت سے لائبریری کے جملہ امور کی تمام تر ذمہ داری ضلع کونسل نے ادا کرنا شروع کر دی تھی۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے پہلے دور حکومت 1972 میں اس کا نام تبدیل کر کے پیپلز ڈسٹرکٹ لائبریری رکھ دیا گیا۔

1977 میں ضیا مارشل لا میں ’’پیپلز‘‘ کا نام ختم کر کے ڈسٹرکٹ لائبریری فیصل آباد اور 1980 میں بلدیاتی انتخابات کے بعد منتخب ضلعی ایوان نے اس کا نام ڈسٹرکٹ لائبریری سے علامہ اقبال لائبریری رکھ دیا۔ 1987 میں اس کا ریفرنس ہال بنایا گیا، جس کے لیے پنجاب لائبریری نے 18 لاکھ روپے کی گرانٹ مہیا کی تھی۔

اس گرانٹ سے ریفرنس ہال کے لیے سات ہزار کتابیں، ایر کنڈیشنز اور فرنیچر خریدا گیا جبکہ ہال کی تعمیر کے لیے فنڈز ضلعی انتظامیہ نے مہیا کیے تھے۔

2009 میں بننے والا لائلپور میوزیم اور 2014 میں قائم ہونے والی لائلپور ہیریٹج فاونڈیشن بھی لائبریری کی اراضی پر ہی تعمیر کی گئی ہیں۔ لائبریری کا سالانہ بجٹ 82 لاکھ  17 ہزار ہے جس میں سے 18 لاکھ لائبریری کی دیکھ بھال اور کتابوں کی خریداری کے لیے ہیں۔

image could not load

لائبریری کے تین مین ہال ہیں، اندر داخل ہوتے بائیں ہاتھ والے ہال میں اردو ادب، سائنس، عربی ادب، تاریخ اسلام، قران و حدیث اور اسلامی فلسفہ کی کتابوں کے سیکشن ہیں

image could not load

دائیں ہاتھ والے ہال میں عام شہریوں کے پڑھنے کے لیے اخبارات کی سہولت فراہم کی گئی  ہے۔ لائبریری میں روزانہ دس کے قریب اخبارات آتے ہیں۔ اس ہال میں قانون، اقبالیات، ہسٹری آف رشیا، پنجابی ادب اور ہندی گورمکھی کی ڈھائی سے تین سو کتابیں موجود ہیں

image could not load

اس سے آگے ریفرنس ہال ہے، اس میں دس سے بارہ ہزار کتابیں موجود ہیں جن میں ریاضی، معیشت، انسائیکلوپیڈیا، لغات، انگلش فکشن، آرٹ اور زراعت کی کتب شامل ہیں۔ لائبریری کے اوقات صبح آٹھ سے پانچ بجے تک ہیں، جبکہ ریفرنس سیکشن دو بجے دوپہر سے رات آٹھ بجے تک کھلا رہتا ہے۔

ریفرنس ہال میں ایک گوشہ چلڈرن سیکشن کا ہے جس میں دو ہزار کے قریب کتب رکھی گئی ہیں۔ اس کے علاوہ خواتین کے لیے الگ سے بیٹھنے کا بھی انتظام ہے

image could not load

داخلی دروازے کے بالکل سامنے کمپیوٹر سیکشن ہے، جس سے زیادہ تر نوجوان اور طالب علم استفادہ کرتے ہیں۔ بجلی جانے کی صورت میں جنریٹر کی سہولت دستیاب ہے۔ لائبریری میں بیٹھنے والوں کے لیے ٹھنڈے منرل واٹر کا بھی انتظام کیا گیا ہے۔

لائبریری میں ہر روز آنے والے افراد کی تعداد 125 کے قریب ہے جبکہ اس کے مستقل ممبرز کی تعداد 3200 کے لگ بھگ ہے۔ روزانہ تقریباَ پچاس کے قریب کتابیں ایشو کی جاتی ہیں۔

لائبریری میں کتابوں کی کل تعداد 32 ہزار کے قریب ہے، لائبریری سٹاف کے مطابق ایک لاکھ کی کتابیں اسی ماہ خریدی گئی ہیں جن کی فہرست تیار ہونے کے بعد ان کو بھی جلد لائبریری میں رکھ دیا جائے گا

Courtesy: http://sahiwal.sujag.org/