Aadha Konwanاسلام آباد ( 26مارچ 2015ء) ٹی وی کوئز نیلام گھر کے شہرت یافتہ پروڈیوسر عارف رانا کے اوّلین افسانوی مجموعے ’’آدھاکنواں ‘‘ میں مشاہدے کی گہرائی ملتی ہے جس کی ایک بڑی وجہ یہ بھی ہے کہ انہوں نے تمام عمر کیمرے کے پیچھے رہ کر اپنے کرداروں سے کام لیا۔ آدھا کنواں کی کہانیوں میں معاشرے کے متضاد رویّوں کی عمدہ عکاسی کی گئی ہے اَور گہرا طنز موجود ہے ۔ یہ باتیں نامور ماہر تعلیم اور پنجاب گروپ آف کالجز کے پرنسپل پروفیسر یوسف ابراہیم نے ایک ادبی نشست میں عارف رانا کی کہانیوں پر گفتگو کرتے ہوئے کیں۔ انہوں نے کہا کہ مصنف نے دیہاتی پس منظر کو فنکار انہ حسن کے ساتھ قارئین کے سامنے پیش کیا ہے۔ زبان سادہ ، عام فہم ااور کہانی کی ڈیمانڈ کے مطابق ہے۔ واضح رہے کہ عارف رانا کی کتاب ’’ آدھا کنواں ‘‘ پچھلے برس نومبر میں نیشنل بُک فاؤنڈیشن کے زیر اہتمام امپورٹڈ پیپر پر منفرد سائز میں شائع ہوئی تھی۔ آدھا کنواں کی قیمت 250روپے جسے ریڈرز کلب کے ممبران خصوصی رعایت پر حاصل کر سکتے ہیں۔ پروفیسر یوسف ابراہیم نے کہا کہ این بی ایف بہت معیاری اور نہایت کم قیمت کتب شائع کرنے میں پیش پیش ہے،’’آدھا کنواں ‘‘ اسی سلسلے میں ایک خوبصورت اضافہ ہے۔ انہوں نے کہاکہ عارف رانا نے کسی تکلف، تصنّع اور مرصّع نگاری کے بغیر آدھا کنواں میں شامل کی گئی کسی بھی کہانی کو بوجھل نہیں ہونے دیا بلکہ ان کی ہر کہانی فطری فضابندی کا حُسن لیے ہوئے ہے۔